تاریخ بنو اُمیہ

اشراف کی غلطیوں کی اصلاح کرنے والا! اموی عہد کا ایک واقعہ

اموی خلیفہ سلیمان بن عبدالملک (مدتِ خلافت 715ء تا717ء) کے زمانے میں خزیمہ بن بشرنامی ایک شخص بنی اسد کے قبیلے سے تعلق رکھتا تھا۔ یہ بامروت اور دولتمند تھا، اپنی برادری کے لوگوں کے ساتھ نیک سلوک کرتا اور بھلائی سے پیش آتا۔ گردشِ زمانہ سے وہ غریب ہوگیا اور ان بھائیوں سے مدد کا طالب ہوا جن پر ...

Read More »

عمر بن عبدالعزیزؒ !دنیا کی تمام سلطنتیں جن کے سامنے سرنگوں تھیں۔

آراے نکلسن اپنی کتاب ’’تاریخ ادبیاتِ عربی‘‘ میں لکھتا ہے’’عمربن عبدالعزیز ایک ایسے مسلم حکمران ہیں، جو اپنے پیشر وحکمرانوں سے یکسر مختلف ہیں، اور جن کا مختصر دورِ حکومت ہی اکثر مسلمانوں کے نزدیک میں ایک درخشاں باب کی حیثیت رکھتا ہے ان کے ہم نام اور شہرۂ آفاق بزرگ صحابی حضرت عمرؓ بن الحظاب کے زمانے سے لے ...

Read More »

ظالم ترین حکمران حجاج بن یوسف کی داستانِ عشق!

حجاج بن یوسف

خلیفہ عبدالملک بن مروان کے عہد خلافت میں حجاج بن یوسف ثقفی نامی ایک شخص عراق کا گورنر تھا۔ اسے آپ محمد بن قاسم  کے چچا یا سسر کی نسبت سے بھی جانتے ہیں اور ایک ظالم و جابر حکمران کے حوالے سے بھی۔ یہی وہ شخص تھا جس نےحضرت عبداللہ بن زبیر کو بے دردی سے قتل کرنے کے ...

Read More »

طارق بن زیاد کے قدموں میں 25 بادشاہوں کے تاج پڑے ہوئے تھے۔

طارق بن زیاد

مسلمانوں کی جہاں گیر عسکری قوت نے قسطنطنیہ کی عظیم شاہی طاقت سے ٹکر ا کر اس کے تمام افریقی مقبوضات پر اپنے اقتدار و اقبال کا پرچم گاڑ دیا تھا مگر مراکش کے شمالی ساحل پر صرف ایک قلعہ’’سبطہ ‘‘ عیسائیوں کے پاس صلح نامے کے تحت باقی رہنے دیا گیا۔ اس قلعہ کا حاکم ایک یونانی سردار کونٹ ...

Read More »

تین براعظموں پر حکومت کرنے والے خلیفہ عمر بن عبدالعزیز کی عید!

عمر بن عبدالعزیز

عیدالفطر میں صرف دو چار دن باقی تھے اور ملک کا سب سے بڑا اور مقتدر گھرانہ عید کی خوشیوں کی تلاش میں افسردہ اور قدرے مایوس تھا۔ گھر کی بچیوں کے پاس عید کے لیے نئے کپڑے نہیں تھے اور خاتون خانہ یعنی خاتون اول کی سمجھ میں نہیں آ رہا تھا کہ وہ کیا کرے۔ وہ خود ایک بادشاہ کی بیٹی تھی ...

Read More »